Home  
    Mayor  
    Deputy Mayor  
    Metropolitan Commissioner  
    Departments  
    KMC Directory  
    Photo Gallery  
    Video Gallery  
       
 
 
       
    Tender Information  
    KMC Function  
    Tenders  
    Grand Auctions  
    Section 144 CR.P.C  
    Notifications  
    KMC Resolution  
       
 
 
       
    Public Notice  
    Information  
    National Holidays  
    Prayer Timings  
    Archive  
       


 
 
 
 
     
  بلدیہ عظمیٰ کراچی کی کونسل میں موجود تمام گروپوں نے بلدیاتی نمائندوں کے اختیارات کے حوالے سے متفقہ طور پر دو قراردادیں منظور کی ہیں-  
     
  08-Apr-2019  
     
   
     
  بلدیہ عظمیٰ کراچی کی کونسل میں موجود تمام گروپوں نے بلدیاتی نمائندوں کے اختیارات کے حوالے سے متفقہ طور پر دو قراردادیں منظور کی ہیں، پہلی قرارداد میں حکومت سندھ سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ اگر موجودہ اختیارات و وسائل کے ساتھ بلدیاتی انتخابات کرانے ہیں تو آئندہ بلدیاتی انتخابات نہ کرائے جائیں جبکہ دوسری قرارداد میں سپریم کورٹ سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ اس حوالے سے عدالت عظمیٰ میں داخل میئر کراچی وسیم اختر کی درخواست پر فوری کارروائی اور فیصلہ صادر کیا جائے تاکہ ملک میں بلدیاتی نظام اور جمہوریت مضبوط ہو، اجلاس میں 22 نکاتی ایجنڈے کی منظوری دی گئی جبکہ ایوان کا ماحول مکمل طور پر افہام و تفہیم پر مبنی رہا، حزب اقتدار اور حزب اختلاف کے ممبران نے مختلف موضوعات پر خطاب کیا اور کہا کہ ہر یونین کونسل میں بے شمار مسائل ہیں اور بلدیاتی نمائندے بے اختیار ہیں۔ سیور یج، پانی، صفائی ستھرائی اور دیگر بنیادی سہولیات کی فراہمی پر منتخب بلدیاتی نمائندوں کی کوئی دسترس نہیں، ایسے حالات میں یہ نظام نہ ہو تو زیادہ بہتر ہے، اراکین نے کمزور بلدیاتی نظام کے باعث شہر میں بڑھتے ہوئے آوارہ کتوں کی تعداد پر انتہائی سخت نوٹس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے صوبائی حکومت سے کہا کہ وہ کتوں کو مارنے کے لئے ضروری ویکسین اور علاج کے لئے ادویات فراہم کرے تاکہ آوارہ کتوں کا خاتمہ ممکن بنایا جاسکے جبکہ اراکین نے مطالبہ کیا ہے کہ بلدیاتی نظام کو مضبوط کئے بغیر شہر کے مسائل حل نہیں ہوسکتے، مولانا محمد تقی عثمانی، نیوزی لینڈ میں کرائسٹ چرچ کی مساجد اور سرحد پر بھارتی حملوں اور رویئے کی سخت مذمت کرتے ہوئے پاک فوج سے اظہار یکجہتی کیا گیا جبکہ حب ریور روڈ کا نام شاہراہ مولانا مفتی محمود رکھنے کی قرارداد بھی منظور ہوئی،اجلاس سے قائد حزب اختلاف کرم اللہ وقاصی، قائد حزب اقتدار اسلم شاہ آفریدی، آصف صدیقی، جنید مکاتی، اکبر ہاشمی، فضل الرحمن، تاج الدین صدیقی، حنیف میمن، حنیف سورتی، سلطان محمود تاجوانی، خرم فرحان، ندیم اختر آرائیں، انجینئر محمد عامر، میراج شاہ، محمد حسین چانڈیا، صبا کلثوم، سید خلیل امام اور دیگر نے اظہار خیال کیا، میئر کراچی وسیم اختر نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ شہر میں آوارہ کتوں کا بڑھنا گھمبیر ہوگیا ہے میں خود بھی صوبائی حکومت سے درخواست کروں گا کہ وہ ان کے خاتمے کے لئے ضروری اقدامات کرے، انہوں نے کہا کہ سندھ گورنمنٹ کا این ایف سی میں جو حصہ بنتا ہے وہ اسے ملنا چاہئے اور میں نے یہ بات وفاقی سطح پر بھی کہی ہے ، 162ارب کا پیکیج پرعملدرآمد تب تک ممکن نہیں ہوسکتا جب تک سندھ حکومت کو ساتھ نہیں ملایا جائے گا، انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت کو اون بورڈ لینے سے ہی ہونے والے ترقیاتی کاموں کے مثبت نتائج سامنے آئیں گے، انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس اب وقت کم ہے لہٰذا جو وقت بھی باقی رہ گیا ہے اس میں ہمیں اپنا یہ مزاج بنا لینا چاہئے کہ ہم اپنے ہائوس کو بہتر سے بہتر انداز میں چلائیں گے اور آنے والی کونسل کے لئے ایک اچھی مثال چھوڑ جائیں گے، انہوں نے کہا کہ باغ ابن قاسم کو جب میں نے میئر بننے کے بعد پہلی بار وزٹ کیا تو یہ انتہائی خستہ حالت میں تھا اور یہاں تجاوزات قائم کرنے کی کوشش کی جارہی تھی، میں نے معزز عدلیہ سے درخواست کرکے یہاں پر تجاوزات قائم ہونے سے روکا اور باغ ابن قاسم کے سامنے ہی غیرقانونی طور پر تعمیر کی گئی ایک بڑی بلڈنگ کو منہدم کرایا، انہوں نے کہا کہ باغ ابن قاسم کو دوبارہ سے بنانے میں بہت محنت کی گئی ہے ، ماضی میں اس باغ کے لئے سالانہ 6 کروڑ روپے صرف کاغذات پر لئے جاتے رہے مگر یہ اس باغ پر نہیں لگائے گئے اور باغ کی حالت اجڑ کر سب کے سامنے آگئی جسے ہم نے دوبارہ ڈیڑھ سال کی انتھک محنت کے بعد نئے سرے سے بنایا اور ہم وزیراعظم پاکستان کے مشکور ہیں کہ وہ یہاں تشریف لائے اور ہماری کوششوں کو سراہا، انہوں نے کہا کہ ہم نے اس بات کو یقینی بنایا ہے کہ عوام کا پیسہ ضائع نہیں ہونے پائے دیگر اجڑے ہوئے پارکوں کی حالت بھی درست کر رہے ہیں، انہوں نے کہا کہ ہم میں لاکھ سیاسی اختلافات ہوں مگر اپنے ادارے کے وقار اور استحکام کے لئے ہم سب کی ایک ہی سوچ ہے کہ ادارہ مضبوط ہو، انہوں نے کہا کہ یہ حقیقت بھی ہے کہ ہمارے پاس وہ وسائل دستیاب نہیں ہیں جس سے تمام مسائل حل کرلئے جائیں مگر اس کے باوجود جو دستیاب وسائل ہیں ان میں رہ کر تو کام کیاجاسکتا ہے اور وہی ہم کر رہے ہیں گزشتہ چند ماہ میں بلدیہ عظمیٰ کراچی کے اسپتالوں کی حالت کو بہتر بنایا گیا ہے، چڑیا گھر کو بھی شہریوں کے لئے بہترین بنا رہے ہیں، میئر کراچی نے تمام کمیٹیوں کے چیئرمینز کو تنبیہ کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے کمیٹی کے اجلاسوں کو لازمی طور پر منعقد کریں اور جو چیئرمینز ایسا نہیں کریں گے انہیں ان کے عہدوں سے فارغ کردیا جائے گا، مسلم لیگ (ن) کے پارلیمانی لیڈر ندیم اختر آرائیں نے میئر کراچی کو بہت عمدہ طریقے سے اجلاس چلانے پر مبارکباد پیش کی، اکبر ہاشمی نے کہا کہ شہر بھر میں کتوں کے کاٹنے کے واقعات میں اضافہ ہوچکا ہے ، حکومت کو فوری طور پر اس کا سدباب کرنا چاہئے۔  
     
     
   
     
     

 

 

 

 

 
 
     
 

Copyright © 2011-2012 Karachi Metropolitan Corporation. All rights reserved.
The KMC will not be responsible for the content of external internet sites. / Login  / Webmail  / Webmail 2  / 1339 Executive Dashboard