Home  
    Mayor  
    Deputy Mayor  
    Metropolitan Commissioner  
    Departments  
    KMC Directory  
    Photo Gallery  
    Video Gallery  
       
 
 
       
    Tender Information  
    KMC Function  
    Tenders  
    Grand Auctions  
    Section 144 CR.P.C  
    Notifications  
    KMC Resolution  
       
 
 
       
    Public Notice  
    Information  
    National Holidays  
    Prayer Timings  
    Archive  
       


 
 
 
 
     
  میئر کراچی وسیم اختر نے اردو بازار، جامع کلاتھ مارکیٹ اور ملحقہ سڑکوں پر ہونے والے استرکاری کے کام کا معائنہ کے موقع پر کیا۔  
     
  05-Nov-2019  
     
   
     
  میئر کراچی وسیم اختر نے کہا کہ ہے ہم نے اردو بازار، جامع کلاتھ مارکیٹ اور ملحقہ علاقوں کے تاجروں کی پریشانی اورمطالبہ کے پیش نظر جس کے لئے انہوں نے ایم اے جناح روڈپر دھرنا بھی دیا تھااس علاقے کا آج ایک بڑا مسئلہ حل کردیا ہے، 8کروڑ روپے کی لاگت سے اردو بازار، جامع کلاتھ، آرام باغ اور ملحقہ علاقوں میں سڑکوں اور گلیوں کی استرکاری کا کام شروع کر دیا ہے جو چند دن میں مکمل ہو جائے گا،اردو بازار میں پورے شہر کے لوگ آتے ہیں ،ٹوٹی ہوئی سڑکوں پرجمع ہونے والے سیوریج کے پانی کے باعث یہاں سے گزرنا مشکل ہوگیا تھا تاہم اب کئی سال تک یہ علاقہ ان مسائل سے محفوظ ہوگیا ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کی رات اردو بازار اور ملحقہ سڑکوں پر ہونے والے استرکاری کے کام کے معائنہ کے موقع پر کیا۔ اس موقع پر چیئر مین ورکس کمیٹی حسن نقوی ،چیئر مین اسٹیٹ کمیٹی ناصر خان تیموری،یوسی چیئر پرسن عابدہ سلطانہ اور دیگر منتخب نمائندوںسمیت بڑی تعداد میں علاقہ مکین بھی موجود تھے۔ میئر کراچی نے کہا کہ اس علاقے کی حالت انتہائی خراب تھی سیوریج کے ناقص نظام کے باعث اس علاقے کی سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کا شکار تھیں جس کے باعث یہاں کے مکین اور تاجر حضرات کو بہت پریشانی کا سامنا تھا گوکہ اندرونی گلیوںکی تعمیر اور سیوریج کے نظام کو ٹھیک کرنا بلدیہ عظمی کی ذمہ داری نہیں مگر علاقے کی خراب صورتحال کے باعث یہاں کے تاجر سراپا احتجاج تھے اور اہم تجارتی مراکز کے تاجروں کو بنیادی مسائل حل کرانے کے لئے کاروبار بند کرکے ایم اے جناح روڈ پر دھرنا دینا پڑا۔ اطلاع ملنے پر میںخود ان کے پاس پہنچا اور میری درخواست پر تاجروں نے دھرنا ختم کر کے کاروبار کھولا، آج ان سے کیا ہوا وعدہ پورا ہو رہا ہے انہوںنے کہا کہ کراچی کے تاجر ملک میں سب سے زیادہ ریونیو دینے کے باوجود بنیادی مسائل کا شکار ہیں جو کہ شہر اور ملک کے لئے اچھا نہیں جن مارکیٹوں سے اربوں روپے کا ریونیو ملتا ہے وہاں دکاندار سیوریج بکھرا ہونے کی وجہ سے دکانوں سے باہر نہیں آ سکتے تو ایسی حالت میں اس علاقے میں خریدار کیسے آئے گااور کاروبار کیسے ہوگا ؟حکومت کو اس اہم مسئلہ پر غور کرنا چاہئے کیونکہ تاجر وں کا کاروبار بڑھے گا تب ہی ریونیو زیادہ ملے گا۔ بورڈ آف ریونیو نے خود سروے رپورٹ دی ہے کہ کراچی کی چند مارکیٹوں سے ساڑھے تین سو ارب روپے ٹیکس وصول ہوا ہے جو اس سطح کی دیگرشہروں کی مارکیٹوں سے کہیں زیادہ ہے، غور طلب بات یہ ہے کہ کراچی کے بنیادی مسائل بشمول سیوریج، پانی اور صفائی جیسے مسائل کو حل کرنے پر کیوں توجہ نہیں دی جارہی ۔ انہوں نے اپنے مطالبے کو پھر دہراتے ہوئے کہا کہ کراچی کے عوام بہت پریشانی میں ہیں لہٰذا شہر کے بنیادی مسائل حل کرنے کے لئے نظام درست کیا جائے اور کراچی کے لئے خصوصی ترقیاتی پیکیج دیا جائے۔ میئرکراچی نے کہا کہ جن علاقوں سے تجاوزات ہٹائی گئی تھیں وہاں بھی سڑکوں کی استرکاری ہورہی ہے ان علاقوں سے فارغ ہونے کے بعد لنڈا بازار کی سڑک کو تعمیر کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ علاقے کا بنیادی مسئلہ سیوریج کا ہے سیوریج کی وجہ سے ان علاقوں کی گلیاں اور سڑکیں تباہ ہوئیں مگر واٹر بورڈ نے نظام کو درست کرنے میں کوئی تعاون نہیں کیا۔ مجبوراً ہمیں اپنے وسائل سے پہلے سیوریج نظام کودرست کرنا پڑا اور اب سڑکوں کی استرکاری کا کام شروع کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سیوریج نظام کی درستگی کی وجہ سے ہمارا وقت اور اضافی وسائل بھی لگ رہے ہیں اور ہم اس رقم سے بہت سارے علاقوں کی گلیاں اور سڑکیں تعمیر کرسکتے تھے لیکن ہماری مجبوری ہے کہ ہم پہلے سیوریج درست کر رہے ہیں اگر ایسا نہ کرتے تو تعمیر کی گئی سڑکیں اور گلیاں چند دن میں ہی ٹوٹ جاتیں۔ میئر کراچی نے کہا کہ وسائل نہ ہونے کے باوجود شہریوں کے مسائل حل کرنے میں بلدیہ عظمیٰ کوشاں ہے، سیوریج کی خراب صورتحال کی وجہ سے اس علاقے کے عوام کو گھروں سے نکلنا مشکل ہوگیا تھا۔ سارے شہر کے لوگ اردو بازار آتے ہیں یہ ایک اہم علاقہ ہے تاہم اب ان کاموں کے بعد یہاں کے عوام کو کئی سال تک ان مسائل سے چھٹکارا مل گیا ہے ۔  
     
     
 
News Photo Gallery
 
 
 
 
 
 
 

 
     
     

 

 

 

 

 
 
     
 

Copyright © 2011-2012 Karachi Metropolitan Corporation. All rights reserved.
The KMC will not be responsible for the content of external internet sites. / Login  / Webmail  / Webmail 2  / 1339 Executive Dashboard