Home  
    Mayor  
    Deputy Mayor  
    Metropolitan Commissioner  
    Departments  
    KMC Directory  
    Photo Gallery  
    Video Gallery  
       
 
 
       
    Tender Information  
    KMC Function  
    Tenders  
    Grand Auctions  
    Section 144 CR.P.C  
    Notifications  
    KMC Resolution  
       
 
 
       
    Public Notice  
    Information  
    National Holidays  
    Prayer Timings  
    Archive  
       


 
 
 
 
     
  میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ کے ایم سی کی زمینوں پر غیرقانونی قبضہ ختم کرایا جائے اور لینڈ مافیا سے کے ایم سی کی تمام زمینوں ، مارکیٹوں اور پارکوں کو محفوظ بنانے کے لئے اقدامات کئے جائیں-  
     
  11-Mar-2020  
     
   
     
  میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ کے ایم سی کی زمینوں پر غیرقانونی قبضہ ختم کرایا جائے اور لینڈ مافیا سے کے ایم سی کی تمام زمینوں ، مارکیٹوں اور پارکوں کو محفوظ بنانے کے لئے اقدامات کئے جائیں، انہوں نے کہا کہ کراچی میں بڑے پیمانے پر قبضہ مافیا سرگرم ہے اور کے ایم سی کی زمینوں پر مختلف طریقوں سے قبضہ کیا جارہا ہے، یہ بات انہوں نے بدھ کے روز آل سٹی تاجر اتحاد کے چیئرمین حکیم شاہ کی قیادت میں ملنے والے ایک وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہی ، وفد میں لائٹ ہائوس لنڈ ابازار یونین کے عہدیداران بھی شامل تھے، میٹروپولیٹن کمشنر ڈاکٹر سید سیف الرحمن، چیئرمین اسٹیٹ کمیٹی ناصر تیموری، سینئر ڈائریکٹر کوآرڈینیشن مسعود عالم، سینئر ڈائریکٹر اینٹی انکروچمنٹ بشرصدیقی، ڈائریکٹر اسٹیٹ عمران قدیر اور دیگر متعلقہ افسران بھی اس موقع پر موجود تھے، میئر کراچی نے کہا کہ لنڈ ا بازار لائٹ ہائوس سے گزرنے والے نالے سے جن دکانوں اور تجاوزات کو ہٹایا گیا تھا ان کے متاثرین کو لی مارکیٹ میں جگہ دی گئی ہے لیکن ان الاٹیز کو دکانیں تعمیر کرنے کی راہ میں کچھ لوگ رکاوٹ بن رہے ہیں ان کے خلاف فوری کارروائی ضروری ہے، میئر کراچی نے کہا کہ الاٹیز کو قانونی طور پر یہ جگہ فراہم کی گئی ہے اور سرکاری زمین پر جو لوگ قبضہ کئے بیٹھے ہیں ان کے خلاف کارروائی کریں گے، بعض عناصر اپنے مقاصد کے حصول کے لئے اسے سیاسی مسئلہ بنانے میں مصروف ہیں لیکن ان پر یہ واضح کردینا ضروری ہے کہ سرکاری زمین کو سیاسی مسئلہ نہ بنایا جائے، کے ایم سی کو یہ حق حاصل ہے کہ وہ اپنی زمین کو قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے جس طرح چاہے استعمال کرسکتی ہے، اس موقع پر اجلاس کو بتایا گیا کہ علی دینا مارکیٹ لنڈا بازار لائٹ ہائوس کے 297 متاثرین کو گزشتہ دنوں قرعہ اندازی کے ذریعے لی مارکیٹ کے قریب دکانیں تعمیر کرنے کے لئے جگہ الاٹ کی گئی تھی تاکہ وہ وہاں اپنی دکانیں تعمیر کرسکیں، میئر کراچی نے لنڈ ا بازار سے ہٹائے گئے دکانداروں کے وفد کو یقین دلایا کہ اگر قبضہ مافیا اس معاملے پر رکاوٹ بنے گی تو کے ایم سی اور ضلعی انتظامیہ دکانداروں کی مدد کریں گے اور گورنمنٹ کی لینڈ پر قبضہ کرنے والوں کے خلاف ایف آئی آر سمیت دیگر قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی، انہوں نے کہا کہ ایمپریس مارکیٹ ، کراچی چڑیا گھر، شیریں جناح کالونی ،لنڈا بازار لائٹ ہائوس اور دیگر جگہوں سے تجاوزات ہٹانے سے جو افراد متاثر ہوئے ہیں کے ایم سی نے اپنی دیگر مارکیٹوں میں انہیں جگہ اور دکانیں الاٹ کی ہیں تاکہ وہ اپنا کاروبار جاری رکھ سکیں، انہوں نے کہا کہ یہ شہر اور شہریوں کی بہتری کے لئے اقدامات کئے گئے ہیں، کے ایم سی نہ تو کسی کا روزگار چھیننا چاہتی ہے اور نہ ہی کسی کو ان کی دکانوں اور املاک سے محروم کرنا چاہتی ہے، انہوں نے کہا کہ کے ایم سی مالی مشکلات کا شکار ہے لیکن اس کے باوجود کے ایم سی نے فراخدلی اور انسانی ہمدردی کا مظاہرہ کرتے ہوئے متاثرین کی بھرپور مدد کی ہے انہوں نے کہا کہ جن متاثرین کو ابھی تک متبادل جگہ فراہم نہیں کی گئی ہے انہیں جلد ہی جگہ فراہم کی جائے گی، وفد کے ارکان نے ان کے مسائل کو سنجیدگی سے حل کرنے کی یقین دہانی پر ان کا شکریہ ادا کیا اور اپنے بھرپور تعاون کیا یقین دلایا۔  
     
     
 
News Photo Gallery
 
 
 
 
 
 
 

 
     
     

 

 

 

 

 
 
     
 

Copyright © 2011-2012 Karachi Metropolitan Corporation. All rights reserved.
The KMC will not be responsible for the content of external internet sites. / Login  / Webmail  / Webmail 2  / 1339 Executive Dashboard