Home  
    Mayor  
    Deputy Mayor  
    Metropolitan Commissioner  
    Departments  
    KMC Directory  
    Photo Gallery  
    Video Gallery  
       
 
 
       
    Tender Information  
    KMC Function  
    Tenders  
    Grand Auctions  
    Section 144 CR.P.C  
    Notifications  
    KMC Resolution  
       
 
 
       
    Public Notice  
    Information  
    National Holidays  
    Prayer Timings  
    Archive  
       


 
 
 
 
     
  میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ آلائشوں سے متعلق مسائل 95 فیصد حل ہوچکے ہیں،آلائشیں اٹھانے میں غفلت کا مظاہرہ کرنے والے افسران کے خلاف کارروائی کی جائے گی-  
     
  06-Sep-2017  
     
   
     
  میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ آلائشوں سے متعلق مسائل 95 فیصد حل ہوچکے ہیں،آلائشیں اٹھانے میں غفلت کا مظاہرہ کرنے والے افسران کے خلاف کارروائی کی جائے گی،شہر کا سب سے بڑا مسئلہ کچرا ہے،لینڈ فل سائٹ جام چاکرو کا راستہ دس دن سے بند تھا،جام چاکرو کھلنے کے بعد کچرامنتقل کیا جارہا ہے،کراچی کو 25 ارب نہیں 25سو ارب کی ضرورت ہے، سندھ اور وفاقی حکومت کو چاہئے کہ ایک بار ہی نالوں کا مسئلہ حل کریں،کراچی کے صنعتکار نالوں میں ڈالے گئے اپنے پائپ ہٹالیں ورنہ کارروائی کی جائے گی،سیلابی صورتحال کی ذمہ داری سندھ حکومت اور سندھ سولڈ ویسٹ مینجمنٹ پر عائد ہوتی ہے،ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کی دوپہر ضلع وسطی کے مختلف علاقوں کے دورے کے موقع پر میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا، اس موقع پر بلدیہ وسطی کے چیئرمین ریحان ہاشمی، ایم پی اے جمال احمد،ضلع وسطی کی مختلف یونین کمیٹیوں کے چیئرمین، ڈائریکٹر جنرل ورکس شہاب انور، سینئر ڈائریکٹر میونسپل سروسز نعمان ارشد اور دیگر افسران بھی ان کے ہمراہ تھے۔میئر کراچی اپنے دورے کے آغاز پر بلدیہ وسطی کے صدر دفتر پہنچے جہاں چیئرمین بلدیہ وسطی ریحان ہاشمی نے انہیں ضلع وسطی میں صفائی ستھرائی اور آلائشیں اٹھانے کے آپریشن کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی، بعدازاں میئر کراچی وسیم اختر نے لیاقت آباد ، ناظم آباد، نارتھ ناظم آباد، کے ڈی اے چورنگی، اصغر علی شاہ اسٹیڈیم، شاہراہ نور جہاں، حیدری، ناگن چورنگی اور دیگر علاقوں کا دورہ کیا اور صفائی ستھرائی کی صورتحال کا جائزہ لیا،انہوں نے ہدایت کی کہ اصغر علی شاہ اسٹیڈیم کے عقب میں موجود کچرے کو کل تک ہٹا کر ڈمپنگ پوائنٹ پر پہنچا دیا جائے، انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت کی بدانتظامی نے شہر کو برباد کردیا، شہر کی موجودہ صورتحال واٹر بورڈ اور سالڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ کی کوتاہی کا نتیجہ ہے، اگر ڈپٹی کمشنر اپنا کام کرتے تو کراچی کی صورتحال ایسی نہ ہوتی،میئر کراچی وسیم اختر نے ضلع وسطی سے گزرنے والے مختلف برساتی نالوں کا بھی معائنہ کیا اور نالوں کی صفائی کے حوالے سے متعلقہ افسران کو ضروری ہدایات دیں، انہوں نے کہا کہ دستیاب وسائل میں رہتے ہوئے شہر میں صفائی ستھرائی اور دیگر مسائل کے حل کے لئے ہرممکن اقدامات کئے جا رہے ہیں اور ہماری پوری کوشش ہے کہ جلد از جلد شہریوں کو ریلیف مہیا کیا جائے، انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ جلد ہی ضلع وسطی میں صفائی ستھرائی کی صورتحال بہتر ہوجائے گی جس سے مختلف علاقوں میں رہائش پذیر لوگوں کو درپیش مسائل حل ہوں گے، انہوں نے افسران کو ہدایت کی کہ کچرا اٹھانے اور لینڈ فل سائٹ پر پہنچانے کا کام تیز رفتاری کے ساتھ انجام دیا جائے اور اسے کم سے کم وقت میں مکمل کرلیا جائے، انہوں نے کہا کہ دی گئیں ہدایات پر فوری عملدرآمد یقینی بنایا جائے، فرائض کی ادائیگی میں غفلت برتنے والے افسران کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ انہوں نے کہاکہ یہ ہم سب کا شہر ہے اور ہمیں مل کر اسے صاف ستھرا بنانا ہے۔  
     
     
   
     
     

 

 

 

 

 
 
     
 

Copyright © 2011-2012 Karachi Metropolitan Corporation. All rights reserved.
The KMC will not be responsible for the content of external internet sites. / Login  / Webmail  / Webmail 2  / 1339 Executive Dashboard