Home  
    Mayor  
    Deputy Mayor  
    Metropolitan Commissioner  
    Departments  
    KMC Directory  
    Photo Gallery  
    Video Gallery  
       
 
 
       
    Tender Information  
    KMC Function  
    Tenders  
    Grand Auctions  
    Section 144 CR.P.C  
    Notifications  
    KMC Resolution  
       
 
 
       
    Public Notice  
    Information  
    National Holidays  
    Prayer Timings  
    Archive  
       


 
 
 
 
     
  بلدیہ عظمیٰ کراچی کے اجلاس میں اراکین کونسل نے ایک قرارداد کے ذریعے وفاقی و صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ کراچی کے انفراسٹرکچر کو درست کرنے کے لئے فوری طور پر کراچی کو کم از کم 500 ارب روپے کا پیکیج دیا جائے-  
     
  27-Sep-2017  
     
   
     
  بلدیہ عظمیٰ کراچی کے اجلاس میں اراکین کونسل نے ایک قرارداد کے ذریعے وفاقی و صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ کراچی کے انفراسٹرکچر کو درست کرنے کے لئے فوری طور پر کراچی کو کم از کم 500 ارب روپے کا پیکیج دیا جائے تاکہ دنیا کے چھٹے بڑے شہر کے عوام کو بنیادی بلدیاتی سہولیات فراہم کی جاسکیں، بلدیہ عظمیٰ کراچی کا اجلاس بدھ کی سہ پہر کے ایم سی بلڈنگ میں ڈپٹی میئر کراچی ڈاکٹر ارشد عبداللہ وہرہ کی زیرصدارت منعقد ہوا اجلاس میں مجموعی طور پر 9 قراردادوں کی منظوری دی گئی جس میں8 قراردادوں کو اتفاق ِ رائے سے منظور کیا گیا۔ اجلاس میں دیگر منظور ہونے والی قراردادوں میں کراچی میں فوری طور پر اسپرے شروع کرانے، فائر بریگیڈ کی گاڑیوں کی درستگی، گلبائی سے ہاکس بے خصوصاً PAF مسرور سے گیٹ نمبر 1 تک روڈ کی درستگی، ترقیاتی فنڈز کے ایم سی کے بجٹ سے یونین کمیٹی کے چیئرمین کو وسائل کی فراہمی، گلشن جناح کی داخلہ فیس ،بیچ پارک کی داخلہ فیس اور ہل پارک کی داخلہ فیس وصول کرنے کے ٹھیکے کے لئے سفارشات مزید غور و خوص کے لئے پارکس کمیٹی کو روانہ کرنے کی منظوری شامل ہیں۔ڈپٹی میئر کراچی ڈاکٹر ارشد عبداللہ وہرہ نے اجلاس کے دوران کہا کہ شہر کے لئے 168 اسکیمیں جن کی منظوری ہوچکی ہے انشاء اللہ ان پر 15 اکتوبر تک کام شروع ہوجائے گا، کے ایم سی کے فنڈ یونین کمیٹی کو ہی دیئے جا رہے ہیں جبکہ اہم شاہراہوں پر کے ایم سی نے پیچ ورک کا کام جاری رکھا ہوا ہے، اجلا س سے پیپلز پارٹی کے پارلیمانی لیڈر کرم اللہ وقاصی نے کہا کہ جو معاملات یا قرارداد کونسل میں لائی جاتی ہیں انہیں پہلے کمیٹی کے ممبران کے پاس بھی پیش کیا جانا چاہئے، انہوں نے کہا کہ درست معلومات لینا ہمارا حق ہے، انہوں نے کہا کہ ڈی ایم سیز کے ایم سی سے بہتر کام کررہی ہیں جبکہ یونین کمیٹی کا چیئرمین بے اختیار ہے، انہوں نے کہاکہ گراس روٹ پر کے ایم سی کی یونین کمیٹی کا چیئرمین عوام کو جوابدہ ہے ہم چاہتے ہیں کہ یونین کمیٹی کو بااختیار کیا جائے ، مسلم لیگ (ن) کے پارلیمانی لیڈر امان خان آفریدی نے کہا کہ شہر کے مختلف مقامات پر آوارہ کتوں کی بھرمار ہے جن کا خاتمہ ضروری ہے، حنیف میمن نے کہا کہ بلدیاتی الیکشن کے دیر سے انعقاد پر کراچی کا حال بد سے بدتر ہوگیا، محمد عامر نے کہا کہ کراچی جتنا ریونیو ملک کو فراہم کرتا ہے اتنا کراچی پر نہیں لگایا جا رہا یہی وجہ ہے کہ آج کراچی کے بے شمار علاقے کھنڈر کا نقشہ پیش کر رہے ہیں، انہوں نے کہا کہ کراچی ہی وہ شہر ہے جو نہ صرف اس صوبے کے شہروں کو چلا رہا ہے بلکہ سب سے زیادہ ریونیو ملک کو فراہم کر رہا ہے لہٰذا کراچی کو اتنا ضرور دیا جائے جو اس کا حق ہے ۔حبیب حسن نے کہا کہ کراچی کو اس کا جائز حق نہیں دیا جا رہا لہٰذا ہم وفاقی حکومت سے درخواست کر تے ہیں کہ کراچی کو اتنے وسائل ضرور فراہم کئے جائیں جو اس کا حق ہے یہ شہر لاکھوں کروڑوں لوگوں کا ہے لہٰذا اس کو وسائل بھی یہاں کی آبادی کے لحاظ سے ملنے چاہئیں، عارف خان ایڈوکیٹ نے کہاکہ اجلاس کے دوران اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ بلدیہ عظمیٰ کراچی کے متعلقہ محکموں کے افسران دوران اجلاس میں موجود رہیں تاکہ کسی حل طلب معاملے کی صورت میں ان سے بروقت رائے لی جاسکے، انہوں نے کہا کہ تمام شعبوں کو کرپشن سے پاک کرنا ہوگا، افسران سٹی کونسل کے ممبران کو جوابدہ ہیں انہوں نے کہا کہ جن افسران نے ایمانداری کے ساتھ کام کئے ہیں انہیں اللہ تعالیٰ ضرور عزت دیتے ہیں ،پاکستان تحریک انصاف کے پارلیمانی لیڈر فردوس شمیم نقوی نے کہا کہ باغات میں داخلے کے حوالے سے جو ٹھیکے دیئے جا رہے ہیں ان کی تفصیلات کے حوالے سے ممبران کو مکمل آگاہی حاصل ہونی چاہئے، انہوں نے کہا کہ ہم سب اس شہر کی خدمت کا عزم لے کر آئے ہیں اور ہم سب کی مشترکہ کوششوں سے ہی کرپشن کا خاتمہ اور مسائل حل ہوں گے انہوں نے کہا کہ چیئرمینز کو اتھارٹی دی جائے اور چیئرمینز کو اتنا مضبوط بنایا جائے کہ اگر وہ سمجھتے ہیں کہ ان کے علاقے میں کوئی ترقیاتی کام درست نہیں ہو رہا تو وہ اس کام کو درست کراسکیں یا اسے رکواسکیں، انہوں نے کہا کہ اجلاس کا ایجنڈا بنانے سے قبل ممبران سے بھی رائے لی جانی چاہئے تاکہ ان کی آراء کو ایجنڈے میں شامل کیاجاسکے،آصف صدیقی نے کہا کہ ایوان کو قرارداد کے ذریعے یہ مطالبہ کرنا چاہئے کہ ماضی میں جو آکٹرائے ٹیکس کے ایم سی کے پاس تھا اسے دوبارہ سے بحال کیا جائے اور ایک بار پھر آکٹرائے ٹیکس کے ایم سی کو وصول کرنے کا اختیار دیا جائے، کامریڈ جسکانی نے کہا کہ یونین کمیٹی میں چیئرمین چیف ایگزیکٹو کی حیثیت رکھتے ہیں لہٰذا اس بات کی اشد ضرورت ہے کہ مضبوط سے مضبوط تر کیا جاسکے ، انہوں نے کہا کہ بیچ پارک میں عوام کے داخلے کو مفت کیا جائے تاکہ عوام کو سہولت میسر آسکے، حنیف سورتی نے کہا کہ تمام یونین کمیٹیوں میں سیوریج کے مسائل تقریباً یکساں ہیں انہوں نے کہاکہ اگر ہم کے ایم سی کے پیسوں سے مین ہول کے ڈھکن یا رنگ دیتے ہیں تو لوکل گورنمنٹ کو جواب دینا پڑتا ہے کہ ہم نے ان پیسوں سے مذکورہ سامان کیوں لیا کیونکہ مذکورہ ساما ن کی ذمہ داری واٹر بورڈ کی ہے جو ہمارے دائرئہ اختیار میں نہیں، خرم فرحان نے کہا کہ پارکوں میں داخلہ فیس کے ٹھیکے کے حوالے سے ممبران کو اعتماد میں لیا جائے گا، سید مزمل شاہ نے کہا کہ اسپرے کرنے کا کام ڈی ایم سی اور کے ایم سی سے منتقل کرکے یونین کمیٹیوں کو دے دیا جائے، زاہد محمود نے کہاکہ فی یونین کمیٹی اسپرے کے لئے کم از کم 8 گاڑیاں ہونی چاہئیں ، عبدالرحیم شاہ نے کہا کہ اسپرے کے دوران جو دوائی استعمال کی جا رہی ہے اس سے بعض مقامات پر مچھروں کا خاتمہ نہیں ہو پارہا، اجلاس میں کلثوم شمع ، محمد فیضان خان ، شاہنواز جدون، وقار تنولی، محمدرفیق، عبدالمجید، تاج الدین صدیقی، فضل الرحمان، کرامت چوہان، محمد چوہان ،کرسٹوفر، اور دیگر نے بھی اظہار خیال کیا۔قبل ازیں اجلاس کے آغاز پر اراکین نے میڈیا پرسن ملک آفتاب کی والدہ و دیگر مرحومین کے لئے دعائے مغفرت ،بیماروں کے لئے دعائے صحت جبکہ ڈاکٹر رتھ فائوکے انتقال پر ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی،بعدازاں اجلاس برخاست کردیا گیا۔  
     
     
   
     
     

 

 

 

 

 
 
     
 

Copyright © 2011-2012 Karachi Metropolitan Corporation. All rights reserved.
The KMC will not be responsible for the content of external internet sites. / Login  / Webmail  / Webmail 2  / 1339 Executive Dashboard